the etemaad urdu daily news
آیت شریف حدیث شریف وقت نماز

ای پیپر

To Advertise Here
Please Contact
editor@etemaaddaily.com

مہندرا اینڈ مہندرا ہندوستان کی بڑی کمپنیوں میں سے ایک ہے. یہ ہندوستان کی بڑی آٹوموبائل کمپنیوں میں سے ایک ہے. مہندرا اینڈ مہندرا دنیا کی سب سے بڑی ٹریکٹر کمپنی ہے. آج اس کا کاروبار اربوں ڈالر میں ہے.

 

لیکن کیا آپ کو معلوم ہے کہ کبھی اس کمپنی کا نام مہندرا اینڈ محمد تھا؟

جی ہاں، مہندرا اینڈ مہندرا کمپنی کی جب شروعات ہوئی تھی تو اس کا نام مہندرا اینڈ محمد تھا. اس کا ملک کے بٹوارے سے بھی گہرا تعلق ہے. تقسیم کا اس کمپنی پر ایسا اثر پڑا تھا کہ اس کا نام تک تبدیل کر دیا گیا.

 

مہندرا اینڈ مہندرا کمپنی کا آغاز 1945 میں ہوا تھا. اس کے سی مہندرا، جے سی مہندرا اور ملک غلام محمد نے لدھیانہ میں شروع کیا تھا. آغاز میں یہ کمپنی سٹیل کا کاروبار کرتی تھی.

کمپنی کے چیئرمین كیشب مہندرا بتاتے ہیں کہ کے سی مہندرا اور جے سی مہندرا نے ملک غلام محمد کو اس لئے کمپنی میں پارٹنر بنایا تھا تاکہ وہ ہندو مسلم اتحاد کا پیغام دے سکیں. غلام محمد کی کمپنی میں چھوٹی ہی حصہ داری تھی. مگر ان کا نام کمپنی کے ساتھ منسلک کیا گیا تھا.

 

كیشب مہندرا بتاتے ہیں کہ تقسیم سے پہلے جب پاکستان کا مطالبہ نے زور پکڑا تب بھی غلام محمد اور مہندرا خاندان کی دوستی برقرار رہی. اشتراک کاروبار چلتا رہا.

جب اگست 1947 کو ملک آزاد ہوا تو دو حصوں میں بٹ چکا تھا. ملک غلام محمد، پاکستان چلے گئے. وہ پاکستان کے پہلے وزیر خزانہ بنائے گئے تھے.

 

ملک کا بٹوارہ ہوا تو کاروبار کو بھی ہو گیا. 1948 میں مہندرا اینڈ محمد کا نام بدل کر مہندرا اینڈ مہندرا کر دیا گیا. کیونکہ اب غلام محمد اس کمپنی کے پارٹنر نہیں رہ گئے تھے. اگرچہ دونوں خاندانوں کے درمیان رشتہ، تقسیم کے بعد بھی بنا رہا. لیکن کاروباری تعلق ختم ہو گیا.

كیشب مہندرا کہتے ہیں کہ جب ملک غلام محمد پاکستان گئے تو ان کے خاندان کو جھٹکا لگا تھا. انہیں اس بات کا دکھ تھا کہ غلام محمد نے اپنے ارادوں کے بارے میں کبھی بھی مہندرا خاندان کو نہیں بتایا تھا.

 

1951 میں ملک غلام محمد پاکستان کے گورنر جنرل بنائے گئے.

كیشب مہندرا بتاتے ہیں کہ گورنر جنرل بننے کے بعد بھی ملک غلام محمد مہندرا خاندان سے پرانے تعلقات کو نہیں بھولے.

1955 میں غلام محمد، راج پتھ پر ہوئی یوم جمہوریہ کی پہلی پریڈ کے مہمان خصوصی تھے. كیشب مہندرا بتاتے ہیں کہ جب غلام محمد دہلی آئے تو انہوں نے پہلی فون ان کی دادی کو کیا تھا. اس طرح دوستی کا یہ رشتہ اگلی نسلوں تک چلتا رہا.

آج کی تاریخ میں مہندرا اینڈ مہندرا 15 ارب ڈالر کی کمپنی ہے.

 

كیشب مہندرا کا کہنا ہے کہ ہندوستان اور پاکستان کی ثقافت شریک ہے. دونوں ممالک کے لوگ ایک دوسرے کو پسند کرتے ہیں. مگر اس کا اثر سیاسی تعلقات پر نظر نہیں آتی.

وہ امید کرتے ہیں کہ آگے چل کر عام پاکستانیوں اور ہندوستانیوں کی طرح دونوں ممالک کے تعلق سے بھی بہتر ہوں گے. تلخی کم ہوگی اور دونوں ملک قریب آئیں گے.

یہ مواد بی بی سی ہندی سے اردو میں ترجمہ کیا گیا ہے۔

اس پوسٹ کے لئے کوئی تبصرہ نہیں ہے.
تبصرہ کیجئے
نام:
ای میل:
تبصرہ:
بتایا گیا کوڈ داخل کرے:


Can't read the image? click here to refresh
http://st-josephs.in/

اوپینین پول

کیا آپکے خیال میں کشمیر بہت جلد معمول پر آجائے گا؟

ہاں
نہیں
کہہ نہیں سکتے
https://www.darussalambank.com

موسم کا حال

حیدرآباد

etemaad rishtey - a muslim matrimony
© 2019 Etemaad Urdu Daily, All Rights Reserved.