the etemaad urdu daily news
آیت شریف حدیث شریف وقت نماز

ای پیپر

To Advertise Here
Please Contact
editor@etemaaddaily.com

ملک کو آزاد ہوئے ستر سال سے زیادہ کا عرصہ گذر چکا ہے مگر آج بھی ملک کے بیشتر حصوں میں دلت ‘ قبائیلی اور دیگر پسماند ہ طبقات کو چھوت اچھوت کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔حالانکہ دستور ہند میں اس بات کو جرم قراردیا گیا ہے کہ اگر کسی کے ساتھ ذات پات کی بنیاد پر ذلت آمیز سلوک کیاجاتا ہے تو وہ قابل سزا عمل ہوگا۔

اس کے باوجود ملک کے کونے کونے سے اس طرح کی خبریں منظر عام آتی ہیں کہ دلت ہونے کی وجہہ سے مرد اور عورت کے ساتھ بدسلوکی کی گئی ہے ۔

اعلی ذات والو ں کے سیاسی دباؤ میں متعلقہ انتظامیہ کچھ کرنے سے بھی قاصر رہتا ہے اور ہوسکتا ہے انتظامیہ کو خود یہ منشاء ہو کہ دلت ‘ قبائیلی اور دیگر پسماندہ طبقات کے اندر احساس کمتری پیدا کی جائے تاکہ وہ نہ صرف اقتدار سے دور ہیں بلکہ’’ منوسمرتی‘‘ کے قانون کے مطابق زندگی بسر کریں ۔

اسی طرح کا ایک واقعہ مدھیہ پردیش کے ایک گاؤں کی سرپنچ انتیا کے ساتھ پیش آیا ہیں جنہیں محض اس لئے ترنگا لہرا نہیں دیاگیا کیونکہ ان کا تعلق دلت سماج سے ہے ۔

واقعہ کے بعد سرپنچ انتیا نے پولیس میں اس کی شکایت کی اور کمیرے کے سامنے اس بات کا خلاصہ کیا کہ کس طرح سے اونچی ذات والوں نے انہیں ترنگا لہرانے سے روکا ۔پیش ہے ویڈیو ۔

 

اس پوسٹ کے لئے کوئی تبصرہ نہیں ہے.
تبصرہ کیجئے
نام:
ای میل:
تبصرہ:
بتایا گیا کوڈ داخل کرے:


Can't read the image? click here to refresh
http://st-josephs.in/

اوپینین پول

آپ کو لگتا ہے کہ #MeToo مہم انصاف حاصل کرنے کے لئے جنسی طور پر ہراساں متاثرین کی مدد کر رہا ہے

ہاں
نہیں
کہہ نہیں سکتے
http://www.darussalambank.com

موسم کا حال

حیدرآباد

etemaad rishtey - a muslim matrimony
© 2018 Etemaad Urdu Daily, All Rights Reserved.