the etemaad urdu daily news
آیت شریف حدیث شریف وقت نماز

ای پیپر

To Advertise Here
Please Contact
editor@etemaaddaily.com

امریکی ٹریڈ مل ریوز کمپنی نے ایک چھوٹے سے سروے میں کھلاڑیوں کے زیرِ استعمال پانی کی بوتل کو ایک ہفتے بعد دیکھا تو معلوم ہوا کہ ان میں اوسط بیکٹیریا کی تعداد 313,499 سی ایف یو ( کالونی فارمنگ یونٹس) فی سینٹی میٹر تھے۔ سب سے گندی بوتل میں 900,000 سی ایف یو تھے جو بیت الخلا کی سطح کے برابر آلودہ تھی جب کہ کسی جانور یا کتے کے کھلونے میں اوسطاً 2,937 سی ایف یو ہوسکتے ہیں۔
اس کی وجہ بوتلوں کو باقاعدگی سے صاف نہ کرنا اور پسینہ وغیرہ ہے جہاں روزانہ کے حساب سے جراثیم براجمان ہوتے رہتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق ڈھکنا اوپر سے کھلنے والی (سلائڈ ٹوپ) بوتل سب سے زیادہ آلودہ، اسٹرا والی بوتل میں سب سے کم اور گھومنے والے ڈھکنے کی بوتل میں اوسط جراثیم تھے۔ پلاسٹک کے مقابلے میں اسٹیل کی بوتل میں بہت ہی کم جراثیم تھے۔ اس لیے ماہرین کا مشورہ ہے کہ اگر جیب اجازت دے تو ایک ہی دفعہ میں اسٹیل کی بوتل خرید لیں۔ بصورتِ دیگر ہر دوسرے روز پلاسٹک بوتلوں کو اچھی طرح دھوئیں۔

اس پوسٹ کے لئے کوئی تبصرہ نہیں ہے.
تبصرہ کیجئے
نام:
ای میل:
تبصرہ:
بتایا گیا کوڈ داخل کرے:


Can't read the image? click here to refresh
http://st-josephs.in/

اوپینین پول

اتر پردیش میں کیا یہ شہروں کے نام تبدیل کرنا درست ہے اللہ آباد اور فیض آباد سے پرايگراج اور ایودھیا

ہاں
نہیں
بالکل نہیں
http://www.darussalambank.com

موسم کا حال

حیدرآباد

etemaad rishtey - a muslim matrimony
© 2018 Etemaad Urdu Daily, All Rights Reserved.